Moral Stories

Moral Stories

Governor Najamuddin Ayyub Kafi Arsa Tak Shadi Say Inkar Karta Raha, Aik Din

گورنر نجم الدین ایوب کافی عمر ہونے تک شادی سے انکار کرتا رہا ، ایک دن اس کے بھائی اسدالدین نے اس سے کہا : بھائی تم شادی کیوں نہیں کرتے .. .؟ نجم الدین نے جواب دیا : میں کسی کو اپنے قابل نہیں سمجھتا. اسدالدین نے کہا : میں اپ کیلئے رشتہ مانگوں ؟ نجم الدین نے کہا : کس کا ؟ اسدالدین : ملک شاہ بنت سلطان بن مالک شاہ سلجوقی کی بیٹی کا یا وزیر الملک کی بیٹی ک

Haroon ur Rashid Ko Aik Londi Ki Zaroorat Thi Us Nay Elaan Kiya Mujay...

ہارون الرشید کو ایک لونڈی کی ضرورت تھی، اس نے اعلان کیا کہ مجھے ایک لونڈی درکار ہے ،اس کا اعلان سن کر اس کے پاس دو لونڈیاں آئیں اور کہنے لگیں ہمیں خرید لیجیے ! ان دونوں میں سے ایک کا رنگ کالا تھا ایک کا گورا...... ھارون الرشید نے کہا مجھے ایک لونڈی چاہیے دو نہیں

Aik Shakhs Jungle Mein Safar Kar Raha Tha Us Nay Jhariyon Kay Darmiyan Aik...

ایک شخص جنگل کے درمیان سے گزر رہا تھا کہ اس نے جھاڑیوں کے درمیان ایک سانپ پھنسا ہوا دیکھا) سانپ نے اس سے مدد کی اپیل کی تو اس نے ایک لکڑی کی مدد سے سانپ کو وہاں سے نکالا، باہر آتے ہی سانپ نےکہا کہ میں تمہیں ڈسوں گا. اس شخص نے کہا کہ میں نے تمہارے ساتھ نیکی کی ہے تم میرے ساتھ بدی کرنا چاہتے ہو

Shahar Ke Aik Mash’hoor Doctor ke Ghar Jany Ka Itfaq Howa

ﺷﮩﺮ ﮐﮯ ﺍﯾﮏ ﻣﺸﮩﻮﺭ ﮈﺍﮐﭩﺮ ﮐﮯ ﮔﮭﺮ ﺟﺎﻧﮯ ﮐﺎ ﺍﺗﻔﺎﻕ ﮨﻮﺍ۔ ﮈﺍﮐﭩﺮ ﺻﺎﺣﺐ ﺳﮯ ﻣﻼﻗﺎﺕ ﻧﮩﯿﮟ ﮨﻮ ﺳﮑﯽ، ﺣﺎﻻﻧﮑﮧ ﮈﺍﮐﭩﺮ ﺻﺎﺣﺐ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﺑﮭﯽ ﺗﮭﮯ ﺍﻭﺭ ﺍﻧﮑﮯ ﭘﺎﺱ ﻣﯿﺮﮮ ﻟﺌﮯ ﻭﻗﺖ ﺑﮭﯽ ﺗﮭﺎ۔ ﺑﺮﺁﻣﺪﮮ ﻣﯿﮟ ﺑﯿﭩﮭﺎ ﮨﻮﺍ ﺍﯾﮏ ﺷﺨﺺ ﮐﻮﺋﯽ ﮐﺘﺎﺏ ﭘﮍﮪ ﺭﮨﺎ ﺗﮭﺎ۔ ﻋﻤﺮ ﺗﻘﺮﯾﺒﺎً 70 ﺳﺎﻝ ﺗﮭﯽ۔ ﺑﮑﮭﺮﮮ ﺍﻭﺭ ﺑﮯ ﺗﺮﺗﯿﺐ ﺑﺎﻝ، ﺑﮍﮬﯽ ﮨﻮﺋﯽ ﺩﺍﮌﮬﯽ، ﻣﯿﻼ ﮐﭽﯿﻼ ﻟﺒﺎﺱ، ﭘﺮﺍﻧﮯ ﭼﭙﻞ۔ ﻣﻌﻠﻮﻡ ﮨﻮﺍ ﮐﮧ ﻭﮦ ﻣﺤﺘﺮﻡ ﮈﺍﮐﭩﺮ ﺻﺎﺣﺐ ﮐﮯ ﻭﺍﻟﺪ ﮨﯿﮟ۔ ﮐﻮﭨﮭﯽ ﮐﮯ ﺻﺤﻦ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﭘﯿﮍ ﺗﮭﺎ۔

Tamam Wazeer Maidan Mein Teerandazi Ki Mashq Kar Rahay Thay, Sultan Bhi In Kay

تمام وزیر میدان میں تیر اندازی کی مشق کر رہے تھے .سلطان غیاث الدین بھی ان کے ساتھ شریک تھا .اچانک سلطان کا نشانہ خطا ہوگیا اور وہ تیر ایک بیوہ عورت کے بچے کو جا لگا. اس سے وہ مرگیا. سلطان کو پتہ نہ چل سکا. وہ عورت قاضی سلطان کی عدالت میں پہنچ گئی.

Aik Mehfil Mein Dooran e Taqreeb Kuch Batein Huwein, Aik Sahib Kehnay Lagay

ایک محفل میں دوران تقریب کچھ باتیں ہوئیں ایک صاحب کہنے لگے، آپ نے اتنی باتیں کرلیں ذرا یہ تو بتایئے کہ نماز میں دو سجدے کیوں ہیں؟ میں نے کہا : مجھے نہیں معلوم. کہنے لگے: یہ نہیں معلوم تو پھر آپ کو معلوم ہی کیا ہے؟ اتنی دیر سے آپ کی باتیں سن کر محسوس ہورہا تھا کہ آپ علمی آدمی ہیں لیکن آپ تو صفر نکلے.