دھرنا ختم، حکومت اور تحریک لبیک کے درمیان طے پانے والا معاہدہ منظرعام پر آ گیا

ADVERTISEMENT

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) حکومت اور تحریک لبیک کے درمیان مذاکرات کامیاب ، مظاہرے اور دھرنے ختم کرنے کے لئے حکومت اور تحریک لبیک کے درمیان طے پانے والے 5 نکات پر مبنی معاہدے کے مطابق آسیہ مسیح کا نام ای سی ایل پر ڈالا جائیگا اور حکومت آسیہ مسیح بریت کیخلاف نظر ثانی اپیل میں حکومت مداخلت نہیں کرے گی ۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت ،پنجاب حکومت اور تحریک لبیک کے درمیان طے پانے والے معاہدے کو ’’معاہدہ برائے اختتام احتجاج و دھرنا‘‘ کا نام دیا گیا ہے،حکومت اور تحریک لبیک پاکستان کے درمیان احتجاج ختم کرنے کے حوالے سے ہونے والے مذاکرات میں حکومت کی جانب سے وفاقی وزیر مذہبی امور صاحبزادہ ڈاکٹر نور الحق قادری اورصوبائی وزیر قانون پنجاب راجہ بشارت شریک ہوئے جبکہ تحریک لبیک پاکستان کے سرپرست پیر محمد افضل قادری اور ناظم اعلیٰ محمد وحید نور شریک ہوئے۔مذاکرات کامیاب اور معاہدہ طے پانے کے بعد دھرنا ختم کرنےکا اعلان کچھ دیر بعد لاہور میں حکومتی ٹیم اور علماء کے وفد کی مشترکہ پریس کانفرنس میں کیا جائے گا۔

معاہدے کے مطابق آسیہ مسیح کے مقدمے میں نظر ثانی اپیل دائر کردی گئی ہے ، آسیہ مسیح کا نام ای سی ایل میں شامل کیا جائے گا ، آسیہ مسیح نظر ثانی کیس میں حکومت مداخلت نہیں کرے گی ، اس احتجاج کے دوران جتنے تحریک لییک کے جتنے لوگ گرفتار ہوئے ہیں ان کو فوری رہا کیا جائے گا ، آسیہ مسیح بریت کیخلاف تحریک میں اگر کوئی شہادتیں ہوئی ہیں تو ان پر فوری قانونی چارہ جوئی کی جائیگی جبکہ اس دوران جن لوگوں کو تکلیف پہنچی ہے اس پر تحریک لبیک کی جانب سے معذرت کی گئی ہے ۔ اس معاہدے پر وفا قی وزیر مذہبی امور صاحبزادہ ڈاکٹر نور الحق قادری اور صوبائی وزیر قانون پنجاب راجہ بشارت جبکہ تحریک لبیک کی جانب سے مرکزی سرپرست پیر محمد افضل قادری اور ناظم اعلیٰ محمد وحید نور کے دستخط ثبت ہیں۔

ADVERTISEMENT


Share This Post with Your Friends