”قاتل کا مولانا سمیع الحق کے گھر آنا جانا تھا اور۔۔۔“ پولیس نے ابتدائی تفتیش میں ہوشربا انکشاف کر دیا، جان کر آپ کو یقین نہیں آئے گا

ADVERTISEMENT

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن) مولانا سمیع الحق کا قتل ذاتی دشمنی کا شاخسانہ ہونے کا شبہ ، قاتل کا گھر میں آنا جانا تھا ۔دنیا نیوز کے مطابق پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ مولانا سمیع الحق کا قتل ذاتی دشمنی کا شاخسانہ لگتا ہے ، ابتدائی تفتیش سے لگتاہے کہ قاتل کا گھر میں آنا جانا تھا ۔ قاتل دیوار پھلانگ کرگھر میں داخل ہوئے اور مولانا سمیع الحق پر چاقو کے متعدد وار کئے گئے ، گارڈ اور ملازم گھر کا دروازہ بن کرکے گئے تھے ۔

واضح رہے کہ نامعلوم قاتلوں نے راولپنڈی نے مولانا سمیع الحق کے گھر میں اس وقت گھس کر چاپو کے وار کر کے شہید کر دیا جب ان کا گارڈ اور ملازم باہر گئے ہوئے تھے۔ وہ واپس آئے تو مولانا سمیع الحق کو خون میں لت پت بے حس و حرکت پایا جس پر انہیں ہسپتال منتقل کیا گیا تاہم ڈاکٹروں نے تصدیق کی کہ وہ ہسپتال آنے سے پہلے ہی خالق حقیقی سے جا ملے ہیں۔

ADVERTISEMENT


Share This Post with Your Friends